ضلعی انتظامیہ کی شورومز کیخلاف کارروائی انجمن تاجران کا احتجاج لاقانونیت کی حمایت  - Daily Qudrat
Can't connect right now! retry

ضلعی انتظامیہ کی شورومز کیخلاف کارروائی انجمن تاجران کا احتجاج لاقانونیت کی حمایت 


شورومز کے باہر کھڑی گاڑیوں ، ملحقہ گلیوں میں سائیکل اسٹینڈ مافیا کے ہاتھوں شہری پریشان
عام شہریوں کی ہمدردیاں انتظامیہ کیساتھ احتجاج کرنیوالوں کیساتھ آہنی ہاتھوں سے نمٹاجائے 
بلو چستان ہا ئی کو رٹ کے حکم کی روشنی میں ڈپٹی کمشنر کوئٹہ کیپٹن (ر) فر خ عتیق ، اسسٹنٹ کمشز سٹی بتول اسدی اور دیگر ضلعی حکام کی نگرانی میں شہر کے مختلف علاقوں میں شورومز کیخلاف سخت کا روائی عمل میں لائی گئی .کاروائی کے دوران 72شورمز کو سیل کر دیا گیا .

ضرور پڑھیں: میں چیف جسٹس سے کہوں گا سب سے ان کے مقدمے حل کریں جو۔۔۔وزیراعظم نے قوم کے دل کی بات کہہ دی ، یہ مقدمے سیاستدانوں کے نہیں بلکہ ۔۔۔

اس موقع پر ڈپٹی کمشنر کیپٹن (ر) فر خ عتیق نے کہا کہ شورومزسے متعلق عدالت عالیہ کے فیصلے پر من وعن عملدارآمد کو یقینی بنایا جارہا ہے جس کے تحت غیر قانونی طریقے سے قائم تما م شورومز کیخلاف قانون کے مطابق کاروائی عمل میں لائی جا رہی ہے .شہر کے وسط میں شورومزکے با عث ٹریفک بہاؤ کافی متاثر ہورہا تھا .اور اس سے شہریوں کو بھی مشکات کا سامناتھا ،شہریوں کو بنیادی سہولیات کی فراہمی ہماری اولین ترجیحات میں شامل ہے .شہر کے مرکز میں قائم شورومز کے خلاف کا روائی جاری رہے گی.دوسری جانب مرکزی انجمن تاجران بلوچستان کے رہنماؤں نے کہاہے کہ مقامی انتظامیہ نے بغیر کسی نوٹس کے شورومز کو سیل کردیا ہے اگرسیل شوروم نہ کھولئے گئے تو آج یکم جنوری کو 12بجے منان چوک اور پریس کلب کے سامنے احتجاجی مظاہر ودھرنا دینگے اگر پھر بھی ہمارے سیل شوروم نہیں کھولئے گئے تو پورے کوئٹہ شہر میں شٹرڈاؤن کیا جائے گا . ضلعی انتظامیہ اور میٹروپولیٹن کارپوریشن انتظامیہ کی ملی بھگت سے رات کے اندھیرے میں یٹ روڈ ،فاطمہ جناح روڈ ،عدالت روڈ اور ٹیکسی اسٹینڈ کے تمام شوروم ،رکشہ شوروم اور موٹرسائیکل مکینک کی دکانوں کو سیل کردیا گیا ہے جو ایک افسوس ناک بات ہے جو سراسر ظلم اور تاجر دشمنی ہے تجاوزات کیخلاف ضلعی انتظامیہ نے چند ماہ قبل آپریشن شروع کیا تو عوام نے خیر مقدم دکانداروں نے اعتراض کیا، پھر کچھ ہی روز بعد دکانداروں نے دو بارہ تجاوزات قائم کرنا شروع کر دیں ، اب پھرجب انتظامیہ نے شور ومز والوں کیخلاف کا روائی کی تو انجمن تاجران نے احتجاج کی دھمکی دیدی، شورومز کو شہر سے باہر مستقل کونے کا جب فیصلہ ہوا

تو حکومت نے انہیں سریاب روڈ ،اجوئینٹ روڈ پر سہولیات دیں ، لیکن شورومز مالکان نے فوائد اٹھانے لیکن وعدوں کی خلاف ورزی کرتے ہوئے شورومز شہر میں بھی رکھے ، آج فاطمہ جنا ح روڈ، مسجد روڈ ، ملحقہ گلیوں کا جائزہ لیا جائے تو شورومز پر کھڑی گاڑیوں کے باعث ٹریفک بلاک رہتی ہے گلیوں میں موٹرسائیکل اسٹینڈ مافیا کے قبضہ رکھا ہے اس من مانی لاقانونیت کے باعث پیدل چلنا بھی ممکن نہیں رہا، اب جب انتظامیہ نے کاروائی کی ہے تو پھر احتجاج کی دھمکیاں شہر کو لاقانونیت کی جانب دھکیلنے کی کوشش ہے انجمن تاجران کے عہدیدار اپنے عہدہ انجمن کیلئے فنڈز کے حصول کی خاطر شہریوں کے سکھ چین سے کھیلیں تو یہی بہترہے لاقانونیت کی حمایت نہ کر یں ،جہاں تک ٹریفک پولیس کے ناکام ہونے کی وجہ ہے توبھی ذمہ داریہی شورومز مالکان اور ماجر برادری ہے انتظامیہ شہر کے مسائل حل کرنے کیلئے کاروائی کرے عوام ساتھ ہیں ، تاجراحتجاج کرکے بلیک میل کرنے کی کوشش کریں ، تو انتظامیہ عدالت عالیہ سے رجوع کرے خو د ہی مسئلہ حل ہوجائے گا 

..

ضرور پڑھیں: کرپشن کے خاتمے کے لیے ایک قانون سازی کریں گے جسے 'وسل بلوو ایکٹ' کا نام دیا جائے گا،عمران خان کا قوم سے خطاب

مزید خبریں :