ماضی کا لٹل پیرس کوئٹہ دنیا کے آلودہ شہروں کی فہرست میں5ویں نمبر پر 
Can't connect right now! retry

ماضی کا لٹل پیرس کوئٹہ دنیا کے آلودہ شہروں کی فہرست میں5ویں نمبر پر 

خستہ حال سڑکیں ، گندگی اور تجاوزات کی بھرمار پانی غائب ، ٹینکر مافیاکی من مانیاں
بجلی غائب ، نکاسی آب کا نظام بدتر اربوں روپے کے فنڈز کہاں گئے کچھ علم نہیں
صوبائی دارالحکومت کوئٹہ شہر ماضی کالٹل پیرس اب دنیا کے آلودہ ترین شہروں کی فہرست میں پانچویں نمبر پر آگیا، خستہ حال سڑکیں ، گندگی کے ڈھیر ، تجاوزات کی بھرمار، نکاسی آب کے نظام کا نام ونشان نہیں، اربوں روپے کے فنڈز کہاں گئے کچھ معلوم نہیں سب کر پشن کی نظر کوئی پرسان حال نہیں ، کوئٹہ شہر انتظامیہ، میٹروپولیٹن کارپوریشن اور حکومتی دعوؤں کے برعکس خستہ حال سڑکوں جگہ جگہ گندگی کے ڈھیروں ، تجاوزات کی بھر مار بجلی کی بند ش پانی غائب غرضیکہ تمام تر بنیادی سہولیات کے فقدان کی وجہ سے مسائلستان بن چکا ہے وسط شہر کی سڑکیں ٹوٹ پھوٹ کا شکار ہیں گلیوں میں ٹوگہرے کھڈے منہ چڑاتے ہیں اسٹر یٹ لائٹس غائب، ٹریفک سگنلز غیر فعال نالیوں کا پانی شہر کی سڑکوں پر ندی نالوں کی طرح بہتا نظر آتاہے خواتین اور بچوں کا چلنا محال ہے جبکہ گھروں سے شہری نماز کے لئے مسجد جانے کیلئے نکلتے ہیں اور غلاظت بھرے چھینٹے کپڑوں پر پڑنے کے باعث بغیر نماز ادار کئے انہیں دوبارہ کپڑے تبدیل کرنے کیلئے گھر آنا پڑتاہے نماز مسجد نہیں گھروں میں پڑھتے پر مجبور ہوتے ہیں

تمام مسائل منتخب نمائندوں اور متعلقہ حکام کی ناقص کارکر دگی اور کرپشن کا منہ بولتا ثبوت ہیں ، حکومتی دعووں کے مطابق اربوں روپے کے فنڈز میٹروپولیٹن کا رپوریشن کو جاری کئے جا چکے ہیں، لیکن یہ کہاں خرچ ہوئے کسی کو کچھ معلوم نہیں عوامی حلقوں کے مطابق ایک وقت تھا جب کوئٹہ کا شمار ملک کے پرفضاء خوبصورت شہروں میں ہوتا تھا، یہاں تک کہ کسی وقت اسے لٹل پیرس کا نام دیا گیا تھا مگر اب یہاں کے باسی مسائل سے پریشان ہیں گندگی ، غلاظت کے ساتھ پانی کی کمی ٹینکر مافیا کی من مافیاں نکاسی آب سمیت دیگر مسائل نے شہر کو دنیا کے آلودہ ترین ممالککے شہروں کی فہرست میں پانچویں نمبر پر لاکھڑا کیا ہے افسوس کا مقام تو یہ ہے اربوں روپے فنڈز کی تحقیقات کرانے کیلئے بھی کوئی تیار نہیں کیونکہ سب حصہ وصول کر چکے ہیں
 

..