امریکہ کا جارحانہ رویہ ،قومی سلامتی کمیٹی کا موقف 
Can't connect right now! retry

امریکہ کا جارحانہ رویہ ،قومی سلامتی کمیٹی کا موقف 

قومی سلامتی کمیٹی نے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے بیان کو مسترد اور سخت مایوسی کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ ٹرمپ کا بیان ناقابل فہم اور مایوس کن ہے جس میں پاکستان کی قربانیوں کو یکسر نظر انداز کر دیا گیا، پاکستانی قوم نے دہشت گردی کے خاتمہ اور خطے کے استحکام کے لیے بڑی قربانیاں دی ہیں، پاکستان نے دہشت گردی کے خلاف جنگ ابتدائی طور پر اپنے وسائل سے لڑی ، الزام تراشی افغانستان اور خطے میں پائیدار امن کے مفاد میں نہیں ، غیر ضروری الزامات کے باوجود پاکستان جلد بازی نہیں کرے گا اور مثبت کردارادا کرتا رہے گا ، پاکستانی ایک پروقار قوم ہے اور ملک کا دفاع کرنا جانتی ہے،افغانستان میں بین الاقوامی دہشت گردوں کی محفوظ پناہ گاہیں ہیں .افغانستان میں امریکہ کی ناکامی کا ذمہ دار پاکستان نہیں ہے .

پاکستان الزمات کے باوجود مثبت کردار ادا کرتا رہے گا .ا فغان عوام پر مشتمل مفاہمتی عمل کی حمایت کرتے ہیں . پاکستان نے دہشت گردی کے خلاف جنگ ابتدائی طور پر اپنے وسائل سے لڑی ، غیر ضروری الزامات کے باوجود پاکستان جلد بازی نہیں کرے گا ، افغان عوام پر مشتمل مفاہمتی عمل کیلئے پاکستان اپنے تعمیری کردار کیلئے پرعزم ہے .پاکستان نے اپنے وسائل سے دہشگردی کے خلاف جنگ لڑی ، اس جنگ میں پاکستان کو بھاری نقصان اٹھانا پڑا جس میں ہزاروں پاکستانی شہریوں اور سیکورٹی اہلکاروں کی جانیں ضائع ہوئیں متاثر ہ افراد کے خاندانوں کے درد کا کوئی مداوا نہیں کیا جاسکتا .مالیاتی قدر کے پیچھے ان قربانیوں کو سنگ دلی سے نظر انداز کرنا درست نہیں ہے .اعلامیے میں مزید کہا گیا ہے کہ افغانستان میں بین الاقوامی دہشت گردوں کی محفوظ پناہ گاہیں ہیں ، افغانستان میں ایسے علاقوں کی تعداد بڑھی ہے جہاں حکومتی عملداری نہیں ہے وہاں موجود دہشت گردی تنظیمیں پورے

خطے کیلئے خطرہ ہیں .سرحد پار سے دہشتگردوں نے کاروائیاں کرتے ہوئے معصوم شہریوں کو نقصان پہنچایا .افغانستان میں بڑھتی ہوئی دہشت گردی، کرپشن اور منشیات میں اضافہ خطے کے لیے خطرہ ہے اس لیے پاکستان امن کے قیام کے لیے آج بھی اپنا کردار ادا کرتا رہے گا.واضح رہے کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے ایک بار پھر پاکستان پر الزامات لگاتے ہوئے اپنے ٹوئٹ میں کہا ہے کہ امریکا نے گزشتہ 15 سال میں پاکستان کو 33 ارب ڈالر امداد دے کر بہت بڑی بے وقوفی کی، امداد وصول کرنے کے باوجود بھی پاکستان نے امریکا کے ساتھ جھوٹ بولا.جبکہ گذشتہ روز ہی امریکہ نے پاکستان کی 255ملین ڈالر کی فوجی امداد روکتے ہوئے پاکستان کو کہا کہ وہ پندرہ روز کے اندر اندر اپنی پالیسی اور فیصلے سے امریکی حکومت کو آگاہ کرے امریکہ پاکستان کو تنہا کرنے اور نقصان پہنچانے کے درپے ہیں اور یہ سب کچھ بھارت کا پلان ہے مقصد مسلم امہ کو بھی تنہا اور بے بس اور لاچار کرنا ہے ایک طرف ملک کے خلاف یہ سازشیں تو دوسری جانب ہمارے ہاں کرپشن میں پکڑے اور سزا یافتہ سابق حکمران عدلیہ اور فوج کے خلاف زبان درازی اور ملک میں تحریکیں چلانے کے اعلانات کررہے ہیں جبکہ امریکہ کا یہ جارحانہ رویہ بھی انہی کی ناکام خارجہ پالیسی کا شاخسانہ ہے .
 

..