نواز شریف کے راز افشا کرنے کے دعوے اور قانونی حقائق 
Can't connect right now! retry

نواز شریف کے راز افشا کرنے کے دعوے اور قانونی حقائق 

پیپلزپارٹی کے شریک چیئرمین آصف زرداری نے کہاہے کہ چاہتاہوں کہ نواز شریف رازفاش کردیں مگر ابتداء اپنے گریبان سے کریں ، میاں صاحب ہم پرالزام نہ لگائیں ،اپنے گریبان میں جھانکیں، بتائیں کہ آپ اقتدار میں کیسے آئے؟ آپ نے ہمیشہ بھاری مینڈیٹ کہاں سے لیاآپ ہم پرالزام نہیں لگا سکتے.ہم نے پاور میں آنے کیلئے کسی پاور کاسہارانہیں لیا.

ہمیں توہمیشہ سمندرکی لہروں کے مخالف تیرناپڑا. میاں صاحب آپ کے پاس دولت کی طاقت اور ہمارے پاس عوام کی طاقت ہے،ہمارے پاس عوام کی طاقت ہے،آپ کے پاس دھن کی طاقت ہے.آپ کو دھن کی طاقت مبارک ہو،ہمیں غریبوں کا پیار مبارک ہو، میں چالیس سال سے زمینداری کررہاہوں.قیامت میں شہید بھٹو اور بے نظیر بھٹو پوچھیں گے غریبوں کیلیے کیا کیا؟ میں کہنا چاہتا ہوں کہ میں وڈیروں کے ساتھ ہوں نہ ہی کسی اور کے ساتھ ہوں میں توہاریوں کے ساتھ ہوں.میں ہروہ کام کروں گا جس میں ہمارے مزدوروں اور ہاریوں کافائدہ ہوگا. واضح رہے کہ گزشتہ روز نواز شریف نے کہا تھا کہ اگر پردے کے پیچھے کی کارروائیاں نہ رکیں تو سارے ثبوت اور شواہد قوم کے سامنے رکھ دوں گا.نواز شریف کے راز آشکار کرنے کے دعوے کے بعد انکی صاحبزادی مریم نواز نے بھی حکومتی راز آشکار کرنے کا دعویٰ کیا ہے آئین اور قانون کے مطابق وزیراعظم نے ملک سے وفاداری حکومتی راز افشا نہ کرنے کا حلف اٹھا رکھا ہے حیران کن امر ہے کہ پھر انکی صاحبزادی کو حکومتی اہم معاملات بارے کیسے آگاہی حاصل ہوئی ہے

اس سے تو ظاہر ہوتا ہے کہ تمام حکومتی کارروائیوں بارے انہیں نواز شریف آگاہ کرتے رہے ہیں اور پھر اپوزیشن سمیت حکومتی اداروں کا یہ دعویٰ بھی درست ہے کہ وزیراعظم ہاؤس کے سارے معاملات مریم نواز ہی طے کرتی تھیں اور پھر ڈان لیکس کی خبر اور کارروائیاں بھی حقیقت ہیں پھر ان سب معاملات کو چند ماہ قبل پاکستان کے دورے پر آئے اجیت دوول کی نواز شریف سے کئی گھنٹے تک تنہائی میں ملاقات کے تناظر میں بھی دیکھنے کی ضرورت ہے پھر اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کے اجلاس میں ایل او سی پر بھارتی فوج کی اشتعال انگیزیوں کلبھوشن نیٹ ورک کی گرفتاری پر دو الفاظ بھی نہ بولنا بہت سارے حقائق کو ظاہر کرتا ہے پھر بھارت کے ساتھ ایک جانب سرکاری سطح پر اور دوسری جانب ذاتی سطح پر تجارت اور بھارت میں ان کے کاروبار کو بھی نظر انداز کرنا ممکن نہیں جہاں تک قومی راز آشکار کرنے کا مطلب ہے تو ایسے شخص کے خلاف آئین کے آرٹیکل 6کے تحت کارروائی ہونی چاہیے جس کا ذکر آج کل میڈیا پر شروع ہوچکا ہے جب کارروائی ہوگی تو نواز شریف پھر چیخ وپکار کریں گے .
 

..