تباہی کی بڑی وجہ ،جھوٹ اور منافقت کی سیاست  - Daily Qudrat
Can't connect right now! retry

تباہی کی بڑی وجہ ،جھوٹ اور منافقت کی سیاست 


وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے کہا ہے کہ تنقید کرنے والے صرف تنقید کرتے ہیں اور مسلم لیگ (ن)والے کام کرتے ہیں، ووٹ خرید کر سینیٹر بننے والوں کو عوام کی نمائندگی کا حق نہیں ہے، اگر رضا ربانی کو ان کی جماعت چیئرمین سینیٹ کیلئے نامزد کرتی ہے تو ہم ان کے ساتھ ہیں، ہماری جماعت مستحکم ہے اور ترقیاتی کاموں کا افتتاح کر رہی ہے، سیاست کے فیصلے سڑکوں اور چوراہوں پر نہیں بلکہ پولنگ سٹیشنز پر ہوں گے، جمہوریت کا تسلسل ہو گا تو ترقی کا سفر جاری رہے گا، ملک میں دس ہزار میگاواٹ بجلی کے منصوبے تیار ہو چکے ہیں، مسلم لیگ (ن)نے نہ صرف منصوبے شروع کئے بلکہ ان کو مکمل بھی کیا، جن فیڈرز پر بجلی چوری ہو گی وہاں لوڈشیڈنگ ہو گی.تربیلا فورمنصوبے کے افتتاح پر خوشی ہے اور یہ حکومت کیلئے ایک اعزاز کی بات ہے، تربیلا فورمنصوبہ عالمی ماہرین کی معاونت سے تیار کیا گیا ہے، یہ منصوبہ ملک کو بروقت بجلی فراہم کرے گا، منصوبے سے حاصل بجلی سستی اور ماحول دوست ہو گی، ہم ماحول دوست ہونے کے حوالے سے دنیا کے ایک ذمہ دار ملک ہیں. ہم مستقبل میں بھی اسی طرح کے منصوبے شروع کریں گے، بھاشا اور منڈا ڈیم وقت کی اہم ضرورت ہیں جن کیلئے ہم پرعزم ہیں، دونوں منصوبوں کیلئے عالمی تعاون حاصل نہ ہوا تو اپنے وسائل سے مکمل کریں گے، تربیلا فور کے منصوبے کے آغاز پر بہت سے خدشات کا اظہار کیا گیا، تربیلا فور منصوبے کی بروقت تکمیل میں واپڈا کا کلیدی کردار ہے، منصوبے کی بروقت تکمیل پر واپڈا اور اس کا عملہ مبارکباد کا مستحق ہے، ملک میں 10ہزار میگاواٹ بجلی کے منصوبے تیار ہو چکے ہیں، 65سال میں لگنے والے منصوبوں کے مقابلے میں موجودہ منصوبے 50فیصد ہیں، مسلم لیگ (ن) نے نہ صرف منصوبے شروع کئے

بلکہ ان کو مکمل بھی کیا، جن فیڈرز پر بجلی چوری ہو رہی ہے وہاں لوڈشیڈنگ ضرور ہو گی، انصاف کا تقاضہ ہے کہ چوری ہو نے والی بجلی کا بوجھ دوسروں پر نہ ڈالا جائے، اتنی بجلی پیدا کر رہے ہیں جو آئندہ10سال کیلئے کافی ہو گی،مستقبل میں ملک لوڈشیڈنگ سے بالکل پاک ہو گا. گوادر پورٹ پوری طرح فعال ہو چکا ہے، ملک میں تمام بڑے منصوبے اپنے وسائل اور سی پیک کے ذریعے پورے کئے ہیں، تنقید کرنے والے تنقید کرتے ہیں اور مسلم لیگ(ن) والے کام کرتے ہیں، ووٹ خرید کر سینیٹر بننے والوں کو عوام کی نمائندگی کا کوئی حق نہیں ہے، ہم نے کھلے دل سے رضا ربانی کو چیئرمین سینیٹ بنانے کی پیشکش کی، اگر رضا ربانی کو ان کی جماعت نامزد کرتی ہے تو ہم ان کے ساتھ ہیں، دھاندلی کر کے سینیٹر بننے والوں کا مقابلہ کرناہم اپنا فرض سمجھتے ہیں 5حکومتیں آئیں تو کیا وہ عوام کے مسائل حل نہیں کر سکتی تھیں، موجودہ حکومت آئی تو عوام کے مسائل حل کئے، ہماری جماعت مستحکم ہے اور ترقیاتی کاموں کا افتتاح کر رہی ہے، ہم جمہوری نظام میں شفافیت کے خواہاں ہیں، سیاست کے فیصلے سڑکوں اور چوراہوں پر نہیں بلکہ پولنگ کے سٹیشنز پر ہوتے ہیں، کسی کو حق نہیں کہ اس فیصلے کی نفی کرے، آج ملک میں بہتری آئی ہے، خوشحالی میں اضافہ ہوا ہے، جمہوریت کا تسلسل ہو گا تو ترقی کا سفر جاری رہے گا وزیراعظم کا یہ کہنا بالکل درست ہے کہ سیاست کے فیصلے سڑکوں اور چوراہوں پر نہیں پولنگ اسٹیشنز پر ہونگے تو وہ از خود اپنے گریبان میں جھانکیں کہ نااہل ہونیوالے وزیراعظم نواز شریف جنہیں وہ خود اب بھی اپنا وزیراعظم کہتے ہیں سڑکوں چوراہوں پر جلسوں میں اداروں پر تنقید کرتے ہوئے مشتعل کیوں کررہے ہیں پھر وزیراعظم نے ہارس ٹریڈنگ کی بات کی ہے تو انہیں معلوم ہونا چاہیے کہ اسکا آغاز بھی انہی کے وزیراعظم نے چھانگا مانگا سے کیا تھا ن لیگ کی حکومت کے درمیان پاور پلانٹ لگ رہے ہیں ہر چند ایام کے بعد خراب ہوجاتے ہیں اسی طرح لوڈشیڈنگ ختم ہونے کے دعوے ہیں وہ بھی حقیقت پر مبنی نہیں کیونکہ لوڈشیڈنگ جاری ہے پھر اب جوں جوں گرمی بڑھے گی اضافہ ہوگا تو پھر نئے سرے سے حکومت کے جھوٹ شروع ہوجائینگے پاکستان میں جب تک حکمران جھوٹ اور منافقت کی سیاست نہیں چھوڑیں گے اور عوام بھی جذبات کی بجائے ہوش وحواس میں فیصؒ ے نہیں کرینگے ملک وقوم کو اسی طرح بیوقوف بنا کر لوٹا جاتا رہے گا اسکا واضح ثبوتر 65سال کی متعدد حکومتوں کے حاصل کردہ قرضے اور موجودہ حکومت کے پونے پانچ سال میں لئے گئے قرضوں میں فرق کی واضح مثال ہے .
 

..

مزید خبریں :