ڈالر اور پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ ،نگران حکومت ن لیگی حکومت کا تسلسل  - Daily Qudrat
Can't connect right now! retry

ڈالر اور پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ ،نگران حکومت ن لیگی حکومت کا تسلسل 


پاکستانی روپے کی ڈالر کے مقابلے میں 5روپے کی کمی کے باعث ڈالر ملکی تاریخ کی بلند ترین سطح رپ 122روپے فی ڈالر تک پہنچ گای اور صرف دو روز میں ڈالر مہنگا ہونے کے باعث ملکی قرضوں میں 500ارب روپے اضافہ ہوگیا جبکہ خسارے میں بھی بتدریج اضافہ ہورہا ہے دوسری جانب نگران حکومت نے عید الفطر سے قبل بے بس غریب عوام پر پیٹرول بم گرادیا پیٹرول کی نئی قیمت 4روپے 26پیسے اضافے کے بعد 91روپے 96پیسے لائٹ ڈیزل کی قیمت 6روپے 14پیسے اضافے کے بعد 74روپے 99پیسے مٹی کا تیل 4روپے 46پیسے اضافہ کے بعد 84روپے 34پیسے ہائی سپیڈ ڈیزل کی قیمت میں 6روپے 55پیسے اضافی کردیا گیا ہے جس کے بعد اس کی قیمت 105روپے 31پیسے ہوگئی پیٹرول پر سیلز ٹیکس کی شرح 17فیصد سے بڑھا کر 24فیصد مٹی کے تیل پر سیلز ٹیکس کی شرح 7فیصد سے بڑھا کر 12فیصد اور لائٹ ڈیزل پر سیلز ٹیکس کی شرح ایک فیصد سے بڑھا کر 9فیصد کردی گئی ہے عام لوگوں کا خیال تھا کہ ن لیگ کی حکومت ختم ہونے کے بعد نگران حکومت عوام کا خیال رکھے گی لیکن اس نے آتے ہی پیٹرول کی قیمتوں اور پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں پر ٹیکس میں اضافہ کردیا دوسری جانب ڈالر کی قیمت سوچے سمجھے منصوبے کے تحت بڑھادی اس صورتحال میں حقیقت یہی ہے کہ موجودہ وفاقی حکومت بھی سابقہ ن لیگ کی ہی حکومت کا تسلسل ہے اور جان بوجھ کر ملک کو تباہی کی طرف لے جایا جارہا ہے ڈالر کی قیمت بڑھنے سے درآمدات کی قیمتوں میں اضافہ ہوگا جبکہ ملکی قرضے بڑھیں گے سود میں اضافہ ہوگا یہ سب کچھ اسی طرح ہوا جیسے کہ ن لیگ کی حکومت نے ایمنسٹی سکیم کے وقت کیا تھا تاکہ منی لانڈرنگ کرنے والوں کو فائدہ پہنچے .وزارت خزانہ نے پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کا جواز عالمی مارکیٹ میں خام تیل کی قیمتوں میں اضافہ کو قرار دیا ہے جبکہ یہ دعویٰ سراسر غلط اور بے بنیاد ہے پیپلز پارٹی نے پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے پر پارلیمنٹ کے اندر اور باہر بھر پور احتجاج کرنے کا اعلان کرتے ہوئے کہاکہ حکومت نے عوام پر پیٹرول بم گرادیا ہے پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ عوام پر ظلم ہے لیگی حکومت نے 5 سال تک عوام کو کوئی ریلیف نہیں دیا حکومت نے 5 سال تک عوام کو عالمی منڈی میں تیل کی قیمتوں میں کمی کا ریلیف نہیں دیا جب عالمی مارکیٹ میں تیل کی قیمتوں میں کمی

ہوئی عوام کو محروم رکھا گیا آج حکومت کو عالمی مارکیٹ کے ترجیح یاد آرہا ہے عوام کو ہمیشہ بین الاقوامی ریلیف فراہم کرنے سے انکار کیا غریب عوام حکومت سے تنگ آچکے ہیں پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ قابل مذمت ہے پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے سے مہنگائی کا نیا طوفان آئے گا حکومتی معاشی پالیسیوں کی قلعی کھل چکی ہے پیپلز پارٹی پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں مین اضافے کے خلاف احتجاج کرے گی جبکہ سول سوسائٹی اور دیگر چند سیاستدانوں کی جانب سے عدالت سے رجوع کرنے کا بھی اعلان کردیا گیا ہے ہر پندرہ روز بھی پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ عوام کا بدترین استحصال ہے حکمرانوں کی شاہ خرچیاں کرپشن ہے کہ رکھنے کا نام ہی نہیں لے رہی دوسری جانب حکومت اپنی شاہ خرچیاں پوری کرنے کیلئے کڑی شرائط اور بھاری سود پر متواتر قرضے لے رہی ہے اور پھر سود ادا کرنے کیلئے ایک جانب ہر چند روز بعد پیٹرولیم کی قیمتوں بجلی اور گیس کے نرخوں اور ٹیکسوں میں بھی اضافہ کردیا جاتا ہے پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کے بعد ٹرانسپورٹ کے کرائے بڑھ جاتے ہیں جس سے اشیاء خوردونوش کی قیمتوں میں اضافہ ہوجاتا ہے .

ضرور پڑھیں: چوہدری پرویز الٰہی سپیکر پنجاب اسمبلی منتخب لیکن حمزہ شہباز اور خواجہ سعد رفیق کی ایوان سے ایسی تصاویر سامنے آگئیں کہ ہرکوئی دنگ رہ گیا، یہ تو آپ نے سوچا بھی نہ ہوگا کہ۔۔۔

جوکہ عام عوام کی قوت خرید سے پہلے ہی باہر ہیں اس بارے کوئی دورائے نہیں کہ موجودہ حکومت جوکہن لیگ حکومت ہی کا تسلسل ہے اور جمہوری اور عوامی ہونے کی دعویدار ہے بتدریج عوام سے جینے کا حق چھین رہی ہے اور حکمرانوں کی شاہ خرچیاں اور لوٹ مار ہے کہ ختم ہونے کا نام نہیں لے رہی افسوس کا امر ہے کہ عوام نے بھی اپنے استحصال پر خاموشی اختیار کررہی ہے جسکی وجہ سے حکمران طبقہ من مانیاں کررہا ہے .
 

..

ضرور پڑھیں: آصف زرداری کی مجبوریوں کا احساس ہے اس لیے گلہ نہیں کریں گے‘سعد رفیق