آپ کے گھر میں جو دودھ استعمال ہو رہا ہے وہ خالص ہے یا ملاوٹ شدہ؟ جاننے کا آسان طریقہ استعمال کریں
Can't connect right now! retry

آپ کے گھر میں جو دودھ استعمال ہو رہا ہے وہ خالص ہے یا ملاوٹ شدہ؟ جاننے کا آسان طریقہ استعمال کریں

اسلام آباد(قدرت روزنامہ14جنوری2017) دودھ صحت کے لیے بہت فائدہ مند مشروب مگر اس صورت میں اگر وہ خالص ہو، اس میں ملاوٹ نہ صرف معیار ناقص کرتی ہے بلکہ یہ صحت کے لیے نقصان دہ بھی ثابت ہوسکتا ہے.دودھ میں پانی کے ساتھ ساتھ ڈیٹرجنٹ، یوریا،سینیتھک ملک اور مختلف کیمیکلز کو ملایا جاسکتا ہے.

ان میں سے بیشتر کیمیکلز دودھ میں شامل ہونے کے بعد طویل المعیاد بنیادوں پر صحت پر نقصان دہ اثرات مرتب کرسکتے ہیں.

اگر دودھ میں ڈیٹرجنٹ ملا ہوا ہو تو وہ فوڈ پوائزننگ اور معدے کی دیگر پچیدگیوں کا باعث بن سکتا ہے جبکہ دیگر کیمیکلز سےامراض قلب، کینسر اور جان لیوا امراض کا خطرہ بڑھ جاتا ہے.تاہم دودھ خالص ہے یا ملاوٹ شدہ، اس کو جانچنے کے کئی طریقے موجود ہیں.دودھ کے خالص اور ملاوٹ شدہ ہونے میں فرق معلوم کرنے کا سب سے بہترین طریقہ یہ ہے کہ کسی کالے یا گہرے رنگ کے ہموار برتن پر چمچ کے ساتھ دودھ کے چند قطرے ایک ہی جگہ پر انڈیلیں ،

اور برتن کو ایک جانب جھکائیں اگر دودھ کے یہ چند قطرے اپنی جگہ چھوڑتے ہوئے اپنے پیچھے ایک سفید اور مسلسل لکیر چھوڑیں تو یہ دودھ خالص اور ملاوٹ سے پاک ہے لیکن اگر یہ دودھ کے چند قطرے اپنی جگہ چھوڑتے ہوئے کوئی لکیر نہ بنائیں اور نہ ہی اپنے پیچھے کوئی نشان چھوڑیں بلکہ پانی کی ایک لکیر باقی رہ جائے تو اس کا مطلب یہ ہے کہ یہ دودھ ملاوٹ شدہ ہے.

..