شوپیاں میں نہتے شہریوں کے قتل کیخلاف حریت کانفرنس کا احتجاجی مظاہرہ،ریلیاں، میر واعظ گرفتار - Daily Qudrat
Can't connect right now! retry

شوپیاں میں نہتے شہریوں کے قتل کیخلاف حریت کانفرنس کا احتجاجی مظاہرہ،ریلیاں، میر واعظ گرفتار


بھارتی مظالم کیخلاف شدید نعرے بازی،کاروباری مراکز اور تعلیمی ادارے بند ،ٹرین سروس بھی معطل ہو کر رہ گئی، مظاہرے میں حریت رہنماؤں اور کارکنوں کی بھرپور شرکت 
شہریوں کا قتل بھارتی ریاستی دہشت گردی کی بدترین مثال ہے،جوکسی بھی مہذب معاشرے کیلئے قطعاً قابل قبول نہیں،حریت رہنماؤں کا احتجاجی مظاہرے سے خطاب 
سرینگر (اے این این)مقبوضہ کشمیرمیں بھارتی فورسز کے ہاتھوں شوپیاں میں نہتے شہریوں کے قتل کے خلاف کل جماعتی حریت کانفرنس کے چیئرمین سیدعلی گیلانی کی ہدایت پر حیدر پورہ سرینگر میں ایک احتجاجی مظاہرہ اور ریلیاں نکالی گئیں. بھارتی مظالم کیخلاف شدید نعرے بازی،کاروباری مراکز اور تعلیمی ادارے بند ،ٹرین سروس بھی معطل ہو کر رہ گئی. کشمیرمیڈیاسروس کے مطابق مظاہرے میں حریت رہنماؤں اور کارکنوں بشمول محمد رفیق اویسی ،محمد یوسف نقاش، دیوندر سنگھ بہل ،سید محمد شفیع،محمد شفیع لون ،خواجہ فردوس احمد ، یاسمین راجہ،محمد یسین عطائی، معراج الدین ربانی، سید امتیاز حیدر، رمیز راجہ، عاشق حسین، عمران بٹ، ظہور احمد بیگ اور نثار احمد نے شرکت کی .مظاہرین نے بھارت کے خلاف اور آزادی کے حق میں نعرے بلند کئے . انہوں نے بینرز اور پلے کاڈز اٹھا رکھے تھے ،جن پر کشمیریوں کاقتل عام بند کرو، کشمیریوں کی نسل کشی اور شہری ہلاکتوں پر روک لگاؤ جیسے نعرے درج تھے .مظاہرین نے نہتے کشمیریوں کے قتل عام پر اقوام عالم اور اقوام متحدہ کی مجرمانہ خاموشی پر شدیدناراضگی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ مقبوضہ علاقے میں جاری خونریزی کو نظرانداز کر کے اسکا سند جواز پیش کیاجارہا ہے ،جوکسی بھی مہذب معاشرے کیلئے قطعاً قابل قبول نہیں .مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے حریت رہنماؤں نے ہفتہ کے روز شوپیاں میں چھ شہریوں شاہد احمد وگے ،زاہد احمد چوپان ، سہیل احمد وگے، شاہداحمد خان،شہنواز وگے اور منظور احمد لون کے قتل کابھارتی فورسز کو ذمہ دارٹھہراتے ہوئے کہاکہ فورسز اہلکاروں کو مقبوضہ علاقے میں رائج کالے قوانین کے تحت نہتے کشمیریوں کے قتل عام کی کھلی چھوٹ حاصل ہے . انہوں نے کہاکہ شوپیاں میں 6 شہریوں کا قتل بھارتی ریاستی دہشت گردی کی بدترین مثال ہے

.انہوں نے بھارتی فورسز کے ہاتھوں نہتے کشمیریوں کے قتل کی کسی بین الاقوامی ادارے سے تحقیقات کرانے کا مطالبہ دہرایا.مقبوضہ کشمیر میں بھارتی پولیس نے حریت فورم کے چیئرمین میر واعظ عمر فاروق کو گرفتار لیا . میر واعظ عمر فاروق کو سرینگر کے علاقے نگین میں اس وقت گرفتار کیا گیا اور وہ گھر میں اپنی نظر بندی کو خاطر میں نہ لاتے ہوئے باہر آئے اور دیگر ساتھوں کے ہمراہ شوپیاں کی طرف مارچ کی کوشش کی.انہیں گرفتاری کے بعد نگین تھانے میں منتقل کیا گیا. یاد رہے کہ سید علی گیلانی، میر واعظ عمر فاروق اور محمد یاسین ملک پر مشتمل مشترکہ حریت قیادت نے بھارتی فوجیوں کی طرف سے اتوار کی شب ضلع شوپیا ں کے علاقے پوہو میں 6کشمیری نوجوانوں کے قتل کے خلاف شوپیاں کی طرف مارچ کی کال دی تھی .انہوں نے بھارتی فورسز کی طرف سے جاری چھاپوں اور گرفتاریوں کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ حریت رہنماؤں محمد یاسین ملک ، غلام نبی سمجھی، غلام احمد گلزار، بلال صدیقی،محمد یوسف مکرو،محمد اشرف لایا، عمر عادل ڈاراور خواجہ نذیر احمد مختلف جیلوں اور پولیس اسٹیشنوں میں نظربند ہیں . اس دوران پولیس نے تحریک حریت کے کارکن امتیاز حیدر کو گرفتارکرکے نامعلوم مقام پر منتقل کردیا ہے.
 

..