تشدد کسی مسئلے کا حل نہیں ،پاکستان اور بھارت مسئلہ کشمیر پر مذاکرات کریں ،انا ہزارے  - Daily Qudrat
Can't connect right now! retry

تشدد کسی مسئلے کا حل نہیں ،پاکستان اور بھارت مسئلہ کشمیر پر مذاکرات کریں ،انا ہزارے 


مسئلہ کشمیر لاٹھیوں اور بندوقوں سے نہیں سلجھایا جاسکتا،جنگ دونوں ممالک کو تین دہائیاں پیچھے دھکیل دے گی،
سرحدیں سلگ رہی ہیں آئے دن جوان ہلاک ہو رہے ہیں جس کا تناسب عام جنگ سے بھی زیادہ ہے ، 
موت اور تباہی کا اندازہ صرف مہلوکین کے لواحقین ہی لگا سکتے ہیں،بھارت کے سماجی رہنما کا تقریب سے خطاب 
جموں(ڈیلی قدرت ) امن و استحکام کیلئے جنگ کو آخری متبادل قرار دیتے ہوئے بھارت کے معروف سماجی لیڈر انا ہزارے نے کہاہے کہ ہندوستان اور پاکستان کے مابین جنگ دونوں ممالک کو تین دہائیاں پیچھے دھکیل دے گی. انہوں نے کہا کہ سرحدیں سلگ رہی ہیں آئے دن جوان ہلاک ہو رہے ہیں جس کا تناسب عام جنگ سے بھی زیادہ ہے ، موت اور تباہی کا اندازہ صرف مہلوکین کے لواحقین ہی لگا سکتے ہیں. جموں میں منعقدہ ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ انسانی زندگی کی قیمت کا اندازہ کرنے کے لئے ہمیں مزید کتنے سپاہیوں کی قربانی دینی ہوگی؟. انہوں نے کہا کہ ملک کو کئی مسائل کا سامنا ہے لیکن انہیں لاٹھیوں اور بندوقوں کے زور پر حل نہیں کیا جا سکتا. عدم تشدد کو سب سے طاقتور ہتھیار قرار دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ہم پر امن طریقہ سے ہی مسائل کو حل کر سکتے ہیں. 2011میں بد عنوانیوں کے خلاف شروع کردہ مہم کا ذکر کرتے ہوئے انا ہزارے نے کہا کہ پوری دنیا نے اس مہم کی صرف اس لئے ستائش کی تھی کہ اس دوران ایک بھی پتھر نہیں پھینکا گیا، انہوں نے ریاستی عوام سے اپیل کی کہ وہ حصول انصاف کیلئے پتھر بازی چھوڑ کر پر امن طریقے اپنائیں.مظاہرین پر طاقت کے بیہمانہ استعمال کے لئے سیکورٹی فورسز کی کڑی مذمت کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ کشمیری عوام بیگانے نہیں بلکہ ہمارے اپنے بھائی ہیں ہمیں انہیں طاقت کے بجائے ہمدردی اور دلائل سے قائل کرنا چاہئے.انا ہزارے نے ملک کے مجموعی حالات کو تشویشناک قرار دیتے ہوئے کہا کہ کسی کو بھی قانون اپنے ہاتھ میں لینے کی اجازت نہیں ،ارباب اقتدار کو متنبہ کرتے ہوئے انہوں نے کہا طاقت کے نشہ میں ان لوگوں کو معلوم نہیں کہ وہ اس وقت کیا کررہے ہیں.اروند کیجریوال اور کرن بیدی جیسے افراد کے بارے میں پوچھے جانے پر سماجی لیڈر نے یقین دلایا کہ اس قسم کے لوگ انہیں مزید استعمال کر سکیں گے.اس سے قبل انا ہزار ے انٹر نیشنل اینٹی کورپشن اینڈ ہیومن رائٹس کونسل کی دعوت پر جموں پہنچے اور دسہرہ گراؤنڈ میں ایک ریلی سے خطاب کیا جہاں انہوں نے مرکزی حکومت کو ہدف تنقید بناتے ہوئے کہا کہ بی جے پی کی آمرانہ ذہنیت سے جمہوریت خطرہ میں ہے . انہوں نے کہا کہ پچھلے 22برس کے دوران8 12لاکھ کسانوں نے خود کشی کی ہے لیکن مرکزی سرکار کی پالیسیاں تجارتی گھرانوں تک ہی مرکوز ہیں. انا ہزارے نے کہا کہ کسانوں کو پنشن دینے کا بل پارلیمنٹ میں لٹک رہا ہے ، پٹرول اور ڈیزل کو جی ایس ٹی کے دائرہ سے باہر رکھا گیا ہے تا کہ بر سر اقتدار جماعت پارٹی کو مضبوط کرنے کے لئے اپنی جیبیں بھرنے میں مصروف رہے اور ایک ایک ووٹ ایک ایک لاکھ روپے میں خریدا جا سکے . 
 

..