رانا ثنا اللہ کا عمران خان کی جانب جوتا پھینکنے کے واقعے پر ایسا رد عمل آگیا جو کسی کے وہم وگمان میں بھی نہ تھا، لیگیوں اور ٹائیگروں سمیت سب حیران - Daily Qudrat
Can't connect right now! retry

رانا ثنا اللہ کا عمران خان کی جانب جوتا پھینکنے کے واقعے پر ایسا رد عمل آگیا جو کسی کے وہم وگمان میں بھی نہ تھا، لیگیوں اور ٹائیگروں سمیت سب حیران


فیصل آ باد (قدرت روزنامہ)صوبائی وزیر قانو ن رانا ثنا اللہ نے کہا ہے کہ جوتا پھینکنے کی حرکت کی کبھی حمایت نہیں کی جاسکتی .نجی ٹی وی’’ اے آر وائے ‘‘ نیوز سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے رانا ثنا اللہ کا عمران خان کی جانب جوتا پھینکنے کے واقعے پر اظہار خیال کرتے ہوئے کہناتھا کہ اس طرح کے شرمنا ک واقعے کی پہلے بھی مذمت کی گئی اور آج بھی مذمت کی جائے گی.

ضرور پڑھیں: ’میں پچھلے 5 سال سے مسلسل یہ شرمناک کام کررہا ہوں‘ ایک دن شوہر نے ایسا اعتراف کرلیا کہ بیوی کو زندگی کا سب سے بڑا جھٹکا لگ گیا، یہ تو خوابوں میں بھی نہ سوچا تھا کہ۔۔۔

پچھلے کچھ عرصے سے جس ملک میں جوتا مہم شروع کی گئی ہے اس پر کنٹرول نہ کیا گیا اور صورتحال یہی رہی تو سب پر جوتے اچھا دیے جائیں گے جبکہ تمام سیاسی جماعتوں کو ایسے واقعات پر مل بیٹھ کر سوچنے کی ضرورت ہے. واضح رہے کہ کچھ دیر قبل گجرات میں جلسے سے خطاب کے دوران عمرا ن خان کی طرف جوتا پھینکا گیا جوکپتان کے ساتھ کھڑے علیم خان کے ’’ سینے ‘‘ پر جا لگا. واضح رہے کہ گجرات : پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کے خطاب کے دوران ایک شخص نے اسٹیج پر جوتا پھینکا جو عمران خان کے برابر میں کھڑے پی ٹی آئی رہنما علیم خان کو لگا.عمران خان گاڑی کے اوپر چند رہنماؤں کے ہمراہ کھڑے ہوکر کارکنوں سے خطاب کررہے تھے کہ اچانک حاضرین میں سے کسی نے ان کی جانب جوتا اچھالا جو علیم خان کے سینے پر لگا.یہ واضح نہیں کہ جوتا عمران خان کی جانب پھینکا گیا تھا یا اس کا نشانہ علیم خان ہی تھے.خیال رہے

کہ 11 مارچ کو گڑھی شاہو میں سابق وزیراعظم نواز شریف جامعہ نعیمیہ کے زیراہتمام تقریب میں شریک ہوئے اور جب وہ خطاب کے لئے ڈائس پر آئے تو ایک شخص نے ان کی جانب جوتا اچھالا جو ان کے سینے پر لگا تھا.جوتا اچھالنے والے شخص کو وہاں موجود افراد نے پکڑ کر تشدد کا نشانہ بنایا اور ہال سے باہر لے جاکر سیکیورٹی اہلکاروں کے حوالے کردیا تھا.سابق وزیراعظم پر جوتا پھینکنے والا شخص جامعہ نعیمیہ کا فارغ التحصیل طالبعلم تھا جس کی شناخت منور کے نام سے ہوئی.جوتا پھینکے جانے کے واقعے کے بعد نواز شریف نے تقریب سے مختصر خطاب کیا اور واپس روانہ ہوگئے تھے.اس سے قبل سیالکوٹ میں ورکرز کنونشن سے خطاب کے دوران ایک شخص نے وزیر خارجہ خواجہ آصف کے چہرے پر سیاہی پھینک دی تھی جسے وہاں موجود افراد نے پکڑ کر زد و کوب کرنے کے بعد پولیس کے حوالے کیا تھا.بعدازاں وزیر خارجہ خواجہ آصف کی جانب سے ملزم کو معاف کرنے کے بعد سیاہی پھینکنے والے شخص کو چھوڑ دیا گیا تھا.گزشتہ ماہ 24 فروری کو نارووال میں ورکرز کنونشن سے خطاب کے دوران ایک نوجوان کی جانب سے وفاقی وزیر داخلہ احسن اقبال پر جوتا پھینکا گیا تھا تاہم خوش قسمتی جوتا ان کے قریب سے گزر گیا تھا.

..

ضرور پڑھیں: ’جنسی صحت بھرپور بنانے کے لئے سب سے پہلے یہ کام کرنا چاہیے کہ۔۔۔‘ معروف ڈاکٹر نے سب سے اہم مشورہ دے دیا

مزید خبریں :