”ویڈیو میں چلنے والے گانے میں حضرت محمد ﷺ اور حضرت خدیجہ ؓ کے بارے میں۔۔۔“ مسلمان لڑکے نے پریا پراکاش کے وائرل ہونے والے گانے کے الفاظ کا ایسا ترجمہ بتا دیا جو کوئی مسلمان تصور بھی نہ کر سکتا تھا، ہر کوئی ہکا بکا رہ گیا - Daily Qudrat
Can't connect right now! retry

”ویڈیو میں چلنے والے گانے میں حضرت محمد ﷺ اور حضرت خدیجہ ؓ کے بارے میں۔۔۔“ مسلمان لڑکے نے پریا پراکاش کے وائرل ہونے والے گانے کے الفاظ کا ایسا ترجمہ بتا دیا جو کوئی مسلمان تصور بھی نہ کر سکتا تھا، ہر کوئی ہکا بکا رہ گیا


لاہور (قدرت روزنامہ) سوشل میڈیا کے اس دور میں شہرت حاصل کرنا کچھ مشکل کام نہیں ہے کیونکہ اگر کسی میں کچھ خاص کرنے کی صلاحیت ہے تو وہ راتوں رات شہرت کی بلندیوں پر پہنچ سکتا ہے جس کی تازہ ترین مثال بھارتی اداکارہ ’پریا پراکاش‘ ہیں جن کی چند سیکنڈ کی ویڈیو نے راتوں رات سوشل میڈیا پر دھوم مچا دی. لاہور (ڈیلی پاکستان آن لائن) سوشل میڈیا کے اس دور میں شہرت حاصل کرنا کچھ مشکل کام نہیں ہے کیونکہ اگر کسی میں کچھ خاص کرنے کی صلاحیت ہے تو وہ راتوں رات شہرت کی بلندیوں پر پہنچ سکتا ہے جس کی تازہ ترین مثال بھارتی اداکارہ ’پریا پراکاش‘ ہیں جن کی چند سیکنڈ کی ویڈیو نے راتوں رات سوشل میڈیا پر دھوم مچا دی.

ضرور پڑھیں: نومنتخب وزیرا عظم عمران خان کل صدر ممنون حسین سے عہدے کا حلف لیں گے

یہ ویڈیو کلپ ملیالم فلم ”اورو اڈار لو“ کے گانے ”منیکیا ملارایا پووی“ سے لیا گیا جو دیکھتے ہی دیکھتے وائرل ہو گیا جس کے بعد پراکاش کے سوشل میڈیا اکاﺅنٹس پر فالوورز کی تعداد بھی لاکھوں میں پہنچ گئی تاہم اب ایک مسلمان لڑکے نے یہ انکشاف کیا ہے کہ جس گانے پر یہ ویڈیو فلمائی گئی ہے اس میں حضرت محمد ﷺ اور حضرت خدیجہ ؓ کے بارے میں نامناسب الفاظ ستعمال کئے گئے ہیں.

کراچی سے تعلق رکھنے والے سعود عبداللہ نے فیس بک پر جاری ویڈیو میں انکشاف کیا کہ کس طرح جب اس نے گانے کے الفاظ پر غور کیا تو اس کے جذبات مجروح ہوئے. اس گانے میں ” حضرت محمد ﷺ، حضرت خدیجہؓ، رسول اللہﷺ اور شہر مکہ کے الفاظ استعمال کئے گئے ہیں اور بار بار دہرائے گئے ہیں. ابتدائی طور پر انٹرنیٹ پر وائرل ہونے والی ویڈیو صرف ایک منٹ تیس سیکنڈ کی تھی جس کے بعد پورے گانے کی ویڈیو بھی منظرعام پر آ گئی جو تین منٹ سترہ سیکنڈ کی ہے اور جب یہ پوری ویڈیو منظرعام پر آئی تب ہی اس کے الفاظ کے بارے میں بھی معلوم ہو سکا. یہ معاملہ سامنے آنے کے بعد بھارت میں مسلمان نوجوانوں کی ایک تنظیم نے پریا پراکاش اور گانا بنانے والوں کیخلاف مقدمہ دائر کرنے کیلئے درخواست بھی جمع کروا دی ہے. اس میں کوئی شک نہیں کہ یہ گانا ایک ایسی زبان میں ہے جو شائد کسی بھی پاکستانی کو نہیں آتی اور یہی وجہ ہے کہ کسی نے اس جانب توجہ بھی نہ دی لیکن چونکہ اب اس کے بارے میں معلوم ہو گیا ہے تو اسے شیئر کرنے سے گریز کریں کیونکہ گانے کے الفاظ کے حساب سے بنائی جانے والی ویڈیو انتہائی نامناسب ہے .

..

ضرور پڑھیں: تبدیلی آ گئی ۔۔۔ ڈیسکون کمپنی کے چیف ایگزیکٹو آفیسر عبد الرزاق داؤد کابینہ میں شامل ہونے کے لیے اپنی ہی کمپنی سے مستعفی

مزید خبریں :