کھدائی کے دوران سائنسدانوں کو ہزاروں سال پرانی ممی مل گئی، لیکن اس کے منہ کی جانب دیکھا تو ہر شخص کے خوف کے مارے ہوش اُڑگئے کیونکہ وہاں پر۔۔۔
Can't connect right now! retry

کھدائی کے دوران سائنسدانوں کو ہزاروں سال پرانی ممی مل گئی، لیکن اس کے منہ کی جانب دیکھا تو ہر شخص کے خوف کے مارے ہوش اُڑگئے کیونکہ وہاں پر۔۔۔

قاہرہ(قدرت روزنامہ)مصر سے اب تک درجنوں ممیاں دریافت ہو چکی ہیں تاہم کچھ عرصہ قبل ماہرین آثارقدیمہ کو ایک ایسی ممی مل گئی کہ جس نے بھی اس کے منہ کی طرف دیکھا خوف سے اس کے ہوش اڑ گئے. ڈیلی سٹار کی رپورٹ کے مطابق اس ممی کا منہ کچھ اس طرح کا ہے کہ جیسے وہ چیخ مار رہی ہو.

یہ ممی مصر کی وادی دیر البحاری سے دریافت ہوئی ہے جو معروف کنگز وادی کے قریب ہی واقع ہے. ماہرین کا کہنا ہے کہ انہوں نے آج تک اس طرح کی ممی نہیں دیکھی جو حیران کن طور پر چیخ مار رہی ہے.

ایک ممی کے متعلق ایک نظریہ یہ ہے کہ یہ فرعون رامسس سوئم کے بیٹے شہزادہ پینٹیور کی ممی ہے جس نے اپنے باپ کو قتل کرکے حکومت پر قبضہ کرنے کی کوشش کی لیکن اس کی منصوبہ بندی کا بھانڈا پھوٹ گیا جس پر اسے گرفتار کر لیا گیا اور اس پر مقدمہ چلایا گیا. مقدمے کے دوران دی جانے والی اذیتوں میں اس کی موت واقع ہو گئی.تاہم اب ماہرین آثار قدیمہ نے نیا انکشاف کیا ہے.امریکہ کی یونیورسٹی آف لانگ آئی لینڈ کے پروفیسر باب بریئر کا کہنا ہے کہ ’’یہ ممی کسی ایسے شہزادے کی ہے جسے ایک گروپ حنوط کرکے

محفوظ کرنا چاہتا تھا جبکہ دوسرا گروپ اس سے چھٹکارا پانا چاہتا تھا. جس کی وجہ ممکنہ طور پر یہ تھی کہ اس کی کسی بری حرکت کی وجہ سے شاہی خاندان کو شرمندگی کا سامنا کرنا پڑا ہو گا، جس کی وجہ سے ایک گروپ اس کی لاش حنوط کرنے کے خلاف ہو گیا.‘‘

..