حکومت نے حتمی اعلان کردیا ،اگر آپ گاڑی خریدنا چاہتے ہیں تو حکومت کی نئی شرط جان لیں - Daily Qudrat
Can't connect right now! retry

حکومت نے حتمی اعلان کردیا ،اگر آپ گاڑی خریدنا چاہتے ہیں تو حکومت کی نئی شرط جان لیں


اسلام آباد(قدرت روزنامہ) وزیر اعظم کے معاونِ خصوصی برائے آمدن ہارون اختر خان کا کہنا ہے اب کسی بھی شہری کو نئی گاڑی خریدنے کے لیے ٹیکس دہندہ ہونا ضروری ہے.وزیرِ خزانہ مفتاح اسمٰعیل کے ہمراہ پریس کانفرنس کرتے --> ہوئے ہارون اختر خان نے پوسٹ بجٹ پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ حکومت نے سپر ٹیکس کو ایک فیصد سے کم کر دیا جو ہر سال ایک فیصد کی شرح سے کم ہوجائے گا. انہوں نے کہا کہ مسلم لیگ (ن) کی حکومت آئندہ 5 برس میں فیڈرل بورڈ آف ریونیو (ایف بی آر) کی آمدن کو دگنی کرنے جارہی ہے.ہارون اختر خان کا کہنا تھا کہ جب مسلم لیگ (ن) کی حکومت آئی تھی تو اس وقت صوبوں 13 کھرب روپے دیے جاتے تھے، تاہم موجودہ حکومت کی کوششوں سے صوبوں کو اب 23 کھرب روپے دیے جائیں گے.انہوں نے بتایا کہ بجٹ کے لیے وزیراعظم نے بھی ہمارا ساتھ دیا، اور وزیرخزانہ کی دن رات کی محنت سے یہ بجٹ پیش کیا گیا.اختر ہارون کا کہنا تھا کہ نئے بجٹ میں تنخواہ دار طبقے کے لیے ٹیکس مراعات دی ہیں

جبکہ بینک اور نیشنل ڈیٹا بیس اینڈ رجسٹریشن اتھارٹی (نادرا) کے ساتھ معلومات کا تبادلہ بھی کیا جائے گا.انہوں نے بتایا کہ سگریٹ، سیمنٹ اور اسٹیل پر ایکسائز ڈیوٹی بڑھائی ہے جبکہ انکم ٹیکس کے لیے مختلف اقدامات کیے ہیں.ہارون اختر خان نے بتایا کہ اب نئی گاڑی خریدنے کے لیے مالک کا ٹیکس دہندہ ہونا ضروری ہوگا.ہارون اختر کا کہنا تھا کہ ہم نے مقامی صنعت کو تحفظ دینا ہے اور اسی لیے آئندہ بجٹ میں ایل این جی، کمپیوٹر اور ڈیری پر سیلز ٹیکس کم کردیا گیا ہے.قبلِ ازیں پریس کانفرنس کرتے ہوئے وزیرخزانہ مفتاح اسمٰعیل کا کہنا تھا کہ گردشی قرضے کم سے کم کرنے کی کوشش کی جارہی ہے.انہوں نے واضح کیا کہ بیل آؤٹ پیکیج کے لیے پاکستان کا عالمی مالیاتی فنڈ (آئی ایم ایف) کی طرف جانے کا کوئی ارادہ نہیں ہے.وزیرخزانہ نے کہا کہ مسلم لیگ (ن) کی حکومت نے پاکستان میں پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں ریکارڈ حد تک کمی کی جبکہ یکم جولائی کو پیٹرولیم لیوی نہیں بڑھے گی.مفتاح اسمٰعیل نے حکومتی کارکردگی بتاتے ہوئے کہا کہ مسلم لیگ (ن) کی حکومت نے اپنے دورِ اقتدار میں 12 ہزار میگاواٹ سے زائد کے بجلی کے منصوبے لگائے.انہوں نے کہا کہ نئے ٹیکس دہندہ گان کو ٹیکس نیٹ میں لانے کی کوشش کی جارہی ہے جبکہ اس وقت ملکی جی ڈی پی کی ترقی کی شرح 11 فیصد ہوگئی ہے.خیال رہے کہ 27 اپریل کو پاکستان مسلم لیگ (ن) کی حکومت نے آئندہ مالی سال 19-2018 کے لیے 59 کھرب 32 ارب روپے کا سالانہ بجٹ پیش کیا.

..

مزید خبریں :

سروے