بلوچستان عوامی پارٹی کی حکومت سے عوام بالخصوص اہل کوئٹہ کی توقعات  - Daily Qudrat
Can't connect right now! retry

بلوچستان عوامی پارٹی کی حکومت سے عوام بالخصوص اہل کوئٹہ کی توقعات 


بلوچستان اسمبلی میں بلوچستان عوامی پارٹی 15نشستوں کے ساتھ سب سے بڑی جماعت بن گئی ،ایم ایم اے 9نشستوں کے ساتھ دوسرے جبکہ بی این پی6نشستوں کے ساتھ تیسرے نمبر پر ہے جبکہ پی ٹی آئی کی چار اور پانچ آزاد ارکان بھی انتخابات جیتے ہیں جو حکومت سازی میں کلیدی کردار ادا کر سکتے ہیں ،بلوچستان سے نومنتخب قومی اسمبلی اور صوبائی اسمبلی کے ارکان کا سرکاری طورپر گزٹ نوٹیفکیشن جاری ہونے کے بعد بلوچستان صوبائی اسمبلی کی اجلاس اگست کے دوسرے ہفتے میں بلائے جانے کا امکان ہے جس میں نومنتخب ارکان اسمبلی حلف اٹھائیں گے اور بعد میں 14مخصوص نشستوں جن میں اقلیت اور خواتین کا انتخاب عمل میں لایا جائیگا سب سے پہلے اسپیکر اور ڈپٹی اسپیکر کا انتخاب عمل میں لایا جائیگا جس کے بعد قائد ایوان کا انتخاب عمل میں لایا جائیگا جس کیلئے جمعہ کے روز بھی رابطوں کا سلسلہ جاری تھا اب تک بلوچستان عوامی پارٹی (با پ) ،بلوچستان نیشنل پارٹی (مینگل ) ،اے این پی ،تحریک انصاف بلوچستان ،ہزارہ ڈیموکریٹک پارٹی ،متحدہ مجلس عمل اور آزاد ارکان جن کا غیر سرکاری طورپر اعلان ہوچکا ہے کہ وہ کامیاب ہوچکے ہیں انکا آپس میں رابطوں کا سلسلہ جاری رہا ،قائد ایوان کیلئے پہلے مرحلے میں بلوچستان عوامی پارٹی کے کسی بھی رکن کو منتخب کئے جانے کا امکان ہے جبکہ اسپیکر کا عہدہ بلوچستان نیشنل پارٹی اور ڈپٹی اسپیکر کا عہدہ متحدہ مجلس عمل کے امیدوار کو دیئے جانے کے بارے غور وصلاح ومشورے کا سلسلہ جاری رہے جبکہ بلوچستان عوامی پارٹی نے وزیراعلیٰ کیلئے جام کمال کا نام فائنل کرلیا ہے اور تحریک انصاف کی

بھی انہیں مکمل حمایت حاصل ہوگی جبکہ یہ بھی اطلاعات ہیں اس متوقع اتحاد یا مخلوط حکومت میں جمعیت کو باہر رکھنے پر بھی غور وخوص جاری ہے تاہم اسکا انحصار مولانا فضل الرحمان کے رویے پر ہوگا دوسری جانب یہ بھی اطلاعات ہیں کہ اگست کے آغاز میں عمران خان وزیراعظم کا عہدہ سنبھالتے ہی چاروں صوبوں کے گورنر ز تبدیل کردیں گے تو اس طرح ن لیگ سے مزید یہ 3اور پشتونخوامیپ سے ایک عہدہ چھن جائے گا بلوچستان کی مخلوط حکومت جس میں اکثریت بی اے پی کی ہوگی اور وزیراعلیٰ بھی اسی جماعت کا ہوگا تو اسے وفاق کی مکمل حمایت حاصل ہوگی اور توقع ہے کہ عمران خان اپنے وعدوں کے مطابق بلوچستان کے احساس محرومی ختم کرنے میں مکمل تعاون کرینگے اور بی اے پی کی حکومت عوام کے بنیادی مسائل حل کرے گی تاہم اسے اولین توجہ فراہمی آب پر ہوگی کیونکہ کوئٹہ کے شہری ایک مخصوص مافیا کے ہاتھوں پینے کے پانی خریدنے پر مجبور ہیں اور اس مافیا کے خلاف کارروائی کرنا ہوگی .
 

.

ضرور پڑھیں: ’’مجھے اب ڈرلگتا ہے کہ ۔ ۔ ۔‘‘ معروف اداکارہ ریشم نے شادی سے ہی انکار کردیا ، وجہ ایسی کہ آپ کو بھی شدید دکھ ہوگا

.

ضرور پڑھیں: ’’تو یہ میرے لیڈر عمران خان کا خواب تھا کہ ۔ ۔ ۔‘‘ زرتاج گل نے ایوان صدر پہنچتے ہی ایسی بات کہہ دی کہ پی ٹی آئی کارکنان کیلئے جذبات پر قابو پانا مشکل ہوجائے گا