پاکستان کے اعلی ترین فوجی اعزاز - Daily Qudrat
Can't connect right now! retry

پاکستان کے اعلی ترین فوجی اعزاز


اسلام آباد (قدرت روزنامہ)نشان حیدر پاکستان کا سب سے بڑا فوجی اعزاز ہے جو اب تک وطن کی حرمت پر قربان ہونے والے110فوجی افسروں اور جوانوں کو دیا جا چکا ہے جبکہ ایک جوان کو نشان حیدر کے برابردرجہ حاصل کرنیوالاہلال کشمیر دیاگیاجس کےبعد مجموعی طورپر کہا جاسکتاہے کہ نشان حیدر پانیوالوں کی تعداد111ہے اور یہ صرف پاکستان کیلئے بھارت کے خلاف لڑتے ہوئے بہادری کی مثال قائم کرنے والوں کو عہدوں کا امتیازرکھے بغیر دیاجاتاہے . آپ جانتے ہوں گے کہ”حیدر“ حضرت علی کرم اللہ وجہہ کا لقب ہے جو انہیں ان کی والدہ نے دیا تھا.

ضرور پڑھیں: حنیف عباسی ایک بار پھر جیل میں بیمار پڑ گئے

حیدر کے معنی ”شیر“ کے ہیں، لہٰذا یہ اعزاز انہی کے نام پر16مارچ 1957ءکو قیام پایاتھا. پہلانشان حیدر پنجاب رجمنٹ کے کیپٹن محمدسرورشہید کودیاگیاجنہوں نے روایتی حریف سے لڑتے ہوئے ستائیس جولائی 1948 ءکو جان قربان کی تھی جبکہ آخری بار 1999ءمیں حوالدار لالک جان کو یہ اعزاز دیا گیا تھا. نشان حیدر پاکستان منٹ(سکے بنانے کی سرکاری جگہ)میں وزارت دفاع کے آرڈر پر بنایا جاتا ہے، اور اس کی تیاری کی سب سے خاص بات یہ ہے کہ اسے جنگ کے دوران قبضے میں لیے گئے دشمن کے سازوسامان سے دھات کا ٹکڑا لے کر تیار کیا جاتا ہے. اب تک 1948ءکی جنگ کیلئے ایک ، 1958ءکیلئے ایک ، 1965ءکیلئے ایک ، 1971ءکے شہداءکیلئے پانچ اور دونشان حیدر1999ءمیں ہونیوالی کارگل جنگ کے شہداءکو دیئے گئے . نشان حیدر پانیوالوں میں کیپٹن محمد سرورشہید، میجر طفیل محمد، میجر راجہ عزیز بھٹی ، پائلٹ آفیسر راشدمنہاس، میجر محمد اکرم ، میجر شبیرشریف، سوار محمد حسین ، لانس نائیک محمد محفوظ، کیپٹن کمال شیر خان اورحوالدار لالک جان شامل ہیں . اسی طرح ایک اور اعلیٰ اعزاز ’ہلال کشمیر‘ آزاد کشمیر رجمنٹ کے نائیک سیف علی جنجواءشہید کو دیاگیاجنہوں نے26اکتوبر 1948کو اپنی جان کانذرانہ پیش کیا. ہلال کشمیر کو بھی نشان حیدر کے برابر درجہ دیاگیاہے اور اس کی وجہ سے یہ بھی کہاجاتاہے کہ مجموعی طورپر قوم کے 111سپوتوں کو نشان حیدر سے نوازاگیا..

ضرور پڑھیں: سبحان اللہ مناسک حج کی ادائیگی کیساتھ خانہ کعبہ کا ایسا منظر جس نے دیکھادیکھتا ہی رہ گیا

مزید خبریں :