’’ہم عمرہ کرنے گئے تو میقات پر میں نے عمران سے کہا احرام پہن لو، لیکن انہوں نے یہ کہہ کر انکار کر دیا کہ ۔۔۔‘‘ - Daily Qudrat
Can't connect right now! retry

’’ہم عمرہ کرنے گئے تو میقات پر میں نے عمران سے کہا احرام پہن لو، لیکن انہوں نے یہ کہہ کر انکار کر دیا کہ ۔۔۔‘‘


لندن(قدرت روزنامہ)چیئرمین تحریک انصاف عمران خان کی سابق اہلیہ ریحام خان کی کتاب بالآخر سامنے آ گئی ہے جس میں انہوں نے تہلکہ خیز انکشافات کیے ہیں.شادی کے بعد باقاعدہ اعلان کے بعد وہ عمران خان کے ساتھ عمرے پر گئی تھیں.

ضرور پڑھیں: خدا کاجواب

اس سفر کا احوال بیان کرتے ہوئے ریحام خان نے لکھا ہے کہ ’’عمران خان میرے لیے صرف شوہر تھے، کوئی بڑی شخصیت نہیں. میں انہیں بطور شوہر ہی محبت کرتی تھی لیکن وہ اس بات پر سمجھتے تھے کہ میں ان کے ساتھ اچھا سلوک نہیں کررہی. عمرے پر روانگی پر بھی کچھ ایسا ہی ہوا اور ان کا موڈ بہت خراب ہو گیا. ہمارے ساتھ عون، یوسف اور عنائیہ بھی تھے. جب ہم میقاط پر پہنچے اور پائلٹ نے اعلان کر کے اس مقام پر پہنچنے کا بتایا جہاں عازمین کے لیے احرام باندھنا لازمی ہوتا ہے تو میں نے اپنے بھانجے کو ہدایت کی کہ وہ احرام باندھ کر عمرہ کی نیت کر لے. اس پر عمران خان بول پڑے اورتلخی سے کہا کہ کوئی ضرورت نہیں. ہم جدہ پہنچ کر احرام باندھ لیں گے.‘‘

ریحام خان مزید لکھتی ہیں کہ ’’عمران خان کی اس بات پر میں نے احتجاج کیا اور کہا کہ یہ لازمی ہے. جدہ پہنچ کر احرام نہیں باندھا جا سکتا. اس پر وہ تند لہجے میں بولے کہ ’’منہ بند رکھو اور سو جاؤ.‘‘ عون اور یوسف دونوں نے بھی عمران خان ہی کی بات مانی اور احرام نہیں باندھا.جب ہم سعودی عرب پہنچ کر جہاز سے اترے تو میں اور عنائیہ فوراً باہر آ گئے لیکن عمران خان کو امیگریشن پر انتظار کرنا پڑا. حالانکہ وہ وی آئی پی ایریا تھا لیکن سٹاف نے عمران خان کے ساتھ کوئی خصوصی تعاون نہیں کیا جس پر ان کا موڈ مزید خراب ہو گیا. وہ اس پر بہت تلملائے کہ ان کا درجہ سیلیبرٹی لیڈر کا ہے، انہیں کے ساتھ خصوصی سلوک کیوں نہیں کیا گیا.‘‘واضح رہے کہ ریحام خان نے اپنی یہ کتاب کسی پبلشر سے نہیں چھپوائی بلکہ اسے ایمازون کے ٹیبلٹ کنڈل پر جاری کر دیا ہے. اس کی قیمت 9.99ڈالر رکھی گئی ہے اور اسے صرف آن لائن پڑھا جا سکتا ہے. اس کتاب کا نام بھی انہوں نے ’’ریحام خان‘‘ ہی رکھا ہے.

..

ضرور پڑھیں: اگر وائی فائی کے کمزور سگنلز سے پریشان ہوتے ہیں تو یہ طریقہ آزمائیں اور فل اسپیڈ انجوائے کریں ، پھر نہ کہنا خبر نہ ہوئی

مزید خبریں :